Results 1 to 2 of 2

Thread: کوئی نظم ایسی لکھوں کبھی

  1. #1
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    20,240
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5861
    Rep Power
    214774

    New5555 کوئی نظم ایسی لکھوں کبھی



    کوئی نظم ایسی لکھوں کبھی


    کوئی نظم ایسی لکھوں کبھی

    تری بات بات کی روشنی

    مِرے حرف حرف میں بھر سکے

    ترے لمس کی یہ شگفتگی

    مرے جسم و جاں میں اُتر سکے

    کوئی چاندنی کسِی گہرے رنگ کے راز کی

    مرے راستوں میں بکھر سکے

    تری گفتگو سے بناؤں میں

    کوئی داستاں کوئی کہکشاں

    ہوں محبتوں کی تمازتیں بھی کمال طرح سے مہرباں

    ترے بازوؤں کی بہار میں

    کبھی جُھولتے ہُوئے گاؤں میں

    تری جستجو کے چراغ کو سر شام دِل میں جلاؤں

    اِسی جھلملاتی سی شام میں

    لِکھوں نظم جو ترا رُوپ ہو

    کہیں سخت جاڑوں میں ایک دم جو چمک اُٹھے

    کوئی خوشگوار سی دھُوپ ہو

    جو وفا کی تال کے رقص کا

    کوئی جیتا جاگتا عکس ہو

    کوئی نظم ایسی لکھوں کبھی

    کہ ہر ایک لفظ کے ہاتھ میں

    ترے نام کی

    ترے حروف تازہ کلام کے

    کئی راز ہوں

    جنھیں مُنکشف بھی کروں اگر

    تو جہان شعر کے باب میں

    مِرے دل میں رکھی کتاب میں

    ترے چشم و لب بھی چمک اٹھیں

    مجھے روشنی کی فضاؤں میں کہیں گھیر لیں

    کوئی نظم ایسی لکھوں کبھی




    2gvsho3 - کوئی نظم ایسی لکھوں کبھی

  2. #2
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    20,240
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5861
    Rep Power
    214774

    Default Re: کوئی نظم ایسی لکھوں کبھی

    2gvsho3 - کوئی نظم ایسی لکھوں کبھی

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •