Results 1 to 2 of 2

Thread: تم نے دھرتی کے ماتھے پہ افشاں چُنی

  1. #1
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    25,270
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5876
    Rep Power
    214780

    New5555 تم نے دھرتی کے ماتھے پہ افشاں چُنی


    فنکاروں کے نام


    تم نے دھرتی کے ماتھے پہ افشاں چُنی
    خود اندھیری فضاؤں میں پلتے رہے
    تم نے دنیا کے خوابوں کی جنت بُنی
    خود فلاکت کے دوزخ میں جلتے رہے
    تم نے انسان کے دل کی دھڑکن سُنی
    اور خود عمر بھر خوں اُگلتے رہے

    جنگ کی آگ دنیا میں جب بھی جلی
    امن کی لوریاں تم سناتے رہے
    جب بھی تخریب کی تُند آندھی چلی
    روشنی کے نشاں تم دکھاتے رہے
    تم سے انساں کی تہذیب پھولی پھلی
    تم مگر ظلم کے تیر کھاتے رہے


    تم نے شہکار خونِ جگر سے سجائے
    اور اس کے عوض ہاتھ کٹوا دیئے
    تم نے دنیا کو امرت کے چشمے دکھائے
    اور خود زہرِ قاتل کے پیالے پیے
    تم مرے تو زمانے کے ہاتھوں سے وائے
    تم جیے تو زمانے کی خاطر جیے

    تم پیمبر نہ تھے عرش کے مدعی
    تم نے دنیا سے دنیا کی باتیں کہیں
    تم نے ذروں کو تاروں کی تنویر دی
    تم سے گو اپنی آنکھیں بھی چھینی گئیں
    تم نے دُکھتے دلوں کی مسیحائی کی
    اور زمانے سے تم کو صلیبیں ملیں

    کاخ و دربار سے کوچۂ دار تک
    کل جو تھے آج بھی ہیں وہی سلسلے
    جیتے جی تو نہ پائی چمن کی مہک
    موت کے بعد پھولوں کے مرقد ملے
    اے مسیحاؤ! یہ خود کشی کب تلک
    ہیں زمیں سے فلک تک بڑے فاصلے
    ٭٭٭




    2gvsho3 - تم نے دھرتی کے ماتھے پہ افشاں چُنی

  2. #2
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    25,270
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5876
    Rep Power
    214780

    Default Re: تم نے دھرتی کے ماتھے پہ افشاں چُنی

    2gvsho3 - تم نے دھرتی کے ماتھے پہ افشاں چُنی

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •