Results 1 to 2 of 2

Thread: ہم نہ ہوئے تو کوئی افق مہتاب نہیں دیکھے گا

  1. #1
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    25,270
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5876
    Rep Power
    214780

    New5555 ہم نہ ہوئے تو کوئی افق مہتاب نہیں دیکھے گا


    ہم نہ ہوئے تو کوئی افق مہتاب نہیں دیکھے گا
    ایسی نیند اڑے گی پھر کوئی خواب نہیں دیکھے گا

    نرمی اور مٹھاس میں ڈوبا یہی مہذب لہجہ
    تلخ ہوا تو محفل کے آداب نہیں دیکھے گا

    پیش لفظ سے اختتام تک پڑھنے والا قاری
    جس میں ہم تحریر ہیں بس وہی باب نہیں دیکھے گا

    لہو رلاتے خاک اڑاتے موسم کی سفاکی
    دیکھتے ہیں کب تک یہ شہر گلاب نہیں دیکھے گا

    بپھرے ہوئے دریا کو ہوا کا ایک اشارہ کافی
    کوئی گھر کوئی بھی گھر سیلاب نہیں دیکھے گا

    بے معنی بے مصرف عمر کی آخری شام کا آنسو
    ایک سبب دیکھے گا سب اسباب نہیں دیکھے گا

    اک ہجرت اور ایک مسلسل دربدری کا قصہ
    سب تعبیریں دیکھیں گے کوئی خواب نہیں دیکھے گا
    ٭٭٭


    2gvsho3 - ہم نہ ہوئے تو کوئی افق مہتاب نہیں دیکھے گا

  2. #2
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    25,270
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5876
    Rep Power
    214780

    Default Re: ہم نہ ہوئے تو کوئی افق مہتاب نہیں دیکھے گا

    2gvsho3 - ہم نہ ہوئے تو کوئی افق مہتاب نہیں دیکھے گا

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •