Results 1 to 2 of 2

Thread: کیا رَشک عَرشیوں کی مجھے پاے گاہ کا

  1. #1
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    25,270
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5876
    Rep Power
    214780

    Islam کیا رَشک عَرشیوں کی مجھے پاے گاہ کا



    کیا رَشک عَرشیوں کی مجھے پاے گاہ کا
    زَائِر ہوں آستانِ حَبِیبِ اِلٰہ کا

    ہوں میں غُلام ایسی فَلَک بارگاہ کا
    جس کے گدا کورُتبہ ملے بادشاہ کا

    عمرِ دوام دی گئی اِس واسطے کہ خِضر
    رَہبر رہے مُدام ، مدینے کی راہ کا

    اُس در پہ جَبْہَہ سا ہوں کہ آکر مری طرح
    ذَرُّوں میں امتیاز نہ ہو مہر و ماہ کا

    سمجھا ہوا ہے کُنگرۂ عرش تُو جسے
    غافل! یہ ایک گوشہ ہے اُس کی کُلَاہ کا

    دیں داغِ اِنْفِعال تِرے ساجدینِ در
    خورشید کو جوداغ دِکھائیں جِبَاہ کا

    ہے حامِلانِ عرش سے رُتبہ بَڑھا ہوا
    خُدَّامِ بارگاہِ رِسَالَت پَناہ کا

    خَتْمِ رُسُل ، شَفیعِ اُمَم ، سرورِ دَوکَون
    رکھ پاس حَشْر میں مری شرمِ گناہ کا

    آزار دے نہ ظُلمتِ کُنْجِ لَحد مجھے
    جلوہ اِدھر بھی ایک ، کرم کی نگاہ کا !

    اُس سے خلاف سالکِ بے راہ رو نہ چل
    رُسْتَم ہے مُستقیمِ شریعت کی راہ کا

    کلیات سالک ، ص 135 ، 136 ، مجلس ترقئ ادب لاہور ، سال اشاعت 1966ء )

    انتخاب:لقمان شاہد

    2gvsho3 - کیا رَشک عَرشیوں کی مجھے پاے گاہ کا

  2. #2
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    25,270
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5876
    Rep Power
    214780

    Default Re: کیا رَشک عَرشیوں کی مجھے پاے گاہ کا

    2gvsho3 - کیا رَشک عَرشیوں کی مجھے پاے گاہ کا

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •