Results 1 to 2 of 2

Thread: تاروں کی چلمنوں سے کوئی جھانکتا بھی ہو

  1. #1
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    25,270
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5876
    Rep Power
    214780

    New5555 تاروں کی چلمنوں سے کوئی جھانکتا بھی ہو


    تاروں کی چلمنوں سے کوئی جھانکتا بھی ہو
    اس کائنات میں کوئی منظر نَیا بھی ہو

    اتنی سَیاہ رات میں کس کو صدائیں دوں
    ایسا چراغ دے جو کبھی بولتا بھی ہو

    میں کس طرح یہ مان لُوں فصلِ بہَار
    اِک پھُول تو کھلے کوئی پتہ ہرا بھی ہو

    وہ میرے ساتھ چل سکے ، اُس دھُوپ چھاؤں میں
    محبوب خوش مزاج ہو، غم آشنا بھی ہو

    دُنیا بدل گئی ہے ابھی اور بدلے گی
    کیسے کہوں کہ آنکھ میں شرم و حیا بھی ہو

    وہ چاند تو نہیں ہے مگر چاند کی طرح
    ان پتھروں کی اوٹ سے اب جھانکتا بھی ہو



    2gvsho3 - تاروں کی چلمنوں سے کوئی جھانکتا بھی ہو

  2. #2
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    25,270
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5876
    Rep Power
    214780

    Default Re: تاروں کی چلمنوں سے کوئی جھانکتا بھی ہو

    2gvsho3 - تاروں کی چلمنوں سے کوئی جھانکتا بھی ہو

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •