Results 1 to 2 of 2

Thread: بے نسب ورثے کا بوجھ

  1. #1
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    25,270
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5876
    Rep Power
    214780

    New5555 بے نسب ورثے کا بوجھ


    بے نسب ورثے کا بوجھ

    گہرے پانی کی چادر پہ لیٹی ہُوئی جل پری
    اپنے آئینہ تن کی عریانیوں کے تکلم سے ناآشنا
    موجۂ زلفِ آب رواں سے لپٹ کر
    ہواؤں کی سرگوشیاں سُنتے رہنے میں مشغول تھی!
    ناگہاں
    نیلگوں آسمانوں میں اُڑتے ہوئے دیوتا نے
    زمیں پر جو دیکھا
    تو پرواز ہی بھُول بیٹھا
    نظر جیسے شل ہو گئی
    اُڑنا چاہا____مگر
    خواہشِ بے اماں نے بدن میں قیامت مچا دی
    مگر وصل کیسے ہو ممکن
    کہ وہ دیوتا___آسمانوں کا بیٹا ہُوا!
    جل پری کا تعلّق زمیں سے
    سو خواہش کے عفریت نے
    آسماں اور زمیں کے کہیں درمیاں سرزمینوں کی مخلوق کا رُوپ دھارا
    بہت کھولتی خواہشوں کے تلاطم سے سرشار نیچے اُترنے لگا


    2gvsho3 - بے نسب ورثے کا بوجھ

  2. #2
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    25,270
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5876
    Rep Power
    214780

    Default Re: بے نسب ورثے کا بوجھ

    2gvsho3 - بے نسب ورثے کا بوجھ

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •