Results 1 to 3 of 3

Thread: یہ شادی نہیں ہو سکتی‘‘ نہرو بہن کی شادی کے راستے میں رکاوٹ بن گئے

  1. #1
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    25,270
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5876
    Rep Power
    214780

    candel یہ شادی نہیں ہو سکتی‘‘ نہرو بہن کی شادی کے راستے میں رکاوٹ بن گئے

    یہ شادی نہیں ہو سکتی‘‘ نہرو بہن کی شادی کے راستے میں رکاوٹ بن گئے
    23200 85273746 - یہ شادی نہیں ہو سکتی‘‘ نہرو بہن کی شادی کے راستے میں رکاوٹ بن گئے
    عبدالحفیظ ظفر
    ویسے تو ہندوستان دعویٰ کرتا ہے کہ وہ ایک سیکولر ملک ہے اور دنیا کی سب سے بڑی جمہوریت بھی ہے لیکن کیا یہ سچ ہے ؟ حقیقت یہ ہے کہ ہندوستان کبھی بھی سیکولر ملک نہیں رہا۔ 1929ء میںحضرت قائد اعظمؒ نے نہرو رپورٹ کے جواب میں مسلمانوں کو ان کے جائز حقوق دلوانے کے لئے 14 نکات پیش کئے تھے۔ انہوںنے انڈین یونین کے اندر رہ کر ہی حقوق مانگے تھے لیکن ان نکات کو مسترد کردیا گیا۔ بھارتی دانشور آج تسلیم کرتے ہیں کہ اگر قائد اعظم محمد علی جناحؒ کے 14 نکات تسلیم کرلئے جاتے تو ہندوستان بچ جاتا۔ دراصل یہیں سے قائد اعظم ؒ کو پختہ یقین ہوگیا تھا کہ کانگریس رام راج کی خواہاں ہے۔1937 ء کے انتخابات کے بعد وزارتو ں کی تشکیل کے وقت مسلمانوں کے خلاف بغض مزید کھل کر سامنے آگیاتھا۔اسی طرح کابینہ مشن پلان مسلم لیگ نے منظور کر لیامگر کانگریس نے مسترد کردیا۔ غرضیکہ کانگریس نے قدم قدم پر یہ ثابت کیا کہ وہ مسلمانوں کو ان کے جائز حقوق دینے پر تیار نہیں اور سیکولر از م کا نعرہ محض ایک ڈھونگ ہے۔اس سلسلے میں ایک دلچسپ واقعہ بھی پیش خدمت ہے ۔ ایک نوجوان بیرسٹر سید حسین کا پنڈت جواہر لعل نہرو کی بہن وجے لکشمی پنڈت سے معاشقہ چل رہا تھااور دونوں ایک دوسرے سے شادی کے آرزومند تھے۔ سید حسین موتی لعل نہروکے اخبار کے ایڈیٹر بھی تھے اور وہ بھی سید حسین کی صلاحیتوں کے معترف تھے۔ لیکن جب وجے لکشمی پنڈت نے اپنے والد سے سید حسین سے شادی کی خواہش کا اظہار کیا تو یہی موتی لعل نہرو چراغ پا ہوگئے ۔ انہوں نے صاف انکار کردیاکیونکہ انہیںپتہ تھا کہ شادی سے پہلے ان کی بہن مسلمان ہو جائے گی جس سے ہندو معاشرے میں ان کی ساکھ متاثر ہو گی۔اس کے باوجودوجے لکشمی بھی اپنی ضد پر قائم تھیں ۔ وہ مسلمان ہونے پر تیار تھیں۔موتی لعل نہرونے اپنے بیٹے پنڈت جواہر لعل نہروسے بات کی لیکن جواہر لعل نہرو نے بھی اس شادی کی مخالفت کر دی ۔ مسئلہ گمبھیر ہو گیا۔ یہ افواہیں بھی گردش کرنے لگیں کہ سید حسین اور وجے لکشمی کورٹ میرج کا منصوبہ بنا چکے ہیں ۔ اس پر گاندھی سے رابطہ کیا گیا اور ان سے درخواست کی گئی کہ وہ اس مسئلے پر اپنی حتمی رائے دیں۔ گاندھی نے بھی وجے لکشمی کی سید حسین سے شادی کی تجویز مسترد کردی اور یہ موقف پیش کیا کہ اس سے کانگریس کو سیاسی نقصان پہنچ سکتا ہے ۔ اب طے یہ پایا کہ وجے لکشمی کی فوری طور پر شادی کردی جائے اور پھر ایسا ہی ہوا۔گاندھی ، موتی لعل نہرو اور جواہر لعل نہرونے سیکولرازم کے ’’پرچم‘‘ کو بلند رکھتے ہوئے وجے لکشمی کی شادی اس کی مرضی کے خلاف کردی۔ سید حسین مایوس ہوکر قاہرہ چلے گئے ۔ وہیں وفات پائی ۔70 برس کے بعد بھی بھارت سیکولر ریاست نہ بن سکا بلکہ اب وہ خود خوفناک ہندوانتہاپسند ی کی طرف جارہا ہے جس کا نقصان خود بھارت کو ہوگا۔ ٭…٭…٭

    2gvsho3 - یہ شادی نہیں ہو سکتی‘‘ نہرو بہن کی شادی کے راستے میں رکاوٹ بن گئے

  2. The Following User Says Thank You to intelligent086 For This Useful Post:


  3. #2
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    25,270
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5876
    Rep Power
    214780

    Default Re: یہ شادی نہیں ہو سکتی‘‘ نہرو بہن کی شادی کے راستے میں رکاوٹ بن

    2gvsho3 - یہ شادی نہیں ہو سکتی‘‘ نہرو بہن کی شادی کے راستے میں رکاوٹ بن گئے

  4. The Following User Says Thank You to intelligent086 For This Useful Post:


  5. #3
    Join Date
    Mar 2018
    Location
    Pakistan
    Posts
    2,428
    Mentioned
    9072 Post(s)
    Tagged
    3539 Thread(s)
    Thanked
    1626
    Rep Power
    6

    Default Re: یہ شادی نہیں ہو سکتی‘‘ نہرو بہن کی شادی کے راستے میں رکاوٹ بن

    Quote Originally Posted by intelligent086 View Post
    @intelligent086
    Thanks 4 informative sharing

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •