Results 1 to 2 of 2

Thread: از جاوید چودھری ،کتاب: گئے دنوں کے سورج ، سے اقتباس

  1. #1
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    25,270
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5876
    Rep Power
    214780

    candel از جاوید چودھری ،کتاب: گئے دنوں کے سورج ، سے اقتباس

    جاوید چودھری ،کتاب: گئے دنوں کے سورج ، سے اقتباس

    ممتاز مفتی سے انٹرویو کے دوران پوچھا گیا ایک سوال

    سوال: "یہ الله کیا ہے ؟"

    جواب: " الله الله ہے- لیکن ہے بلکل بچہ-

    آپ کفر کریں شرک کریں، زنا کریں جو جی چاہے کریں ، جب تھک جائیں تو سر پر ٹوپی رکھ کر آنکھوں میں دو آنسو سجا کر اس کے پاس چلے جائیں وہ فورا خوش ہو جائے گا، وہ فورا مان جائے گا-

    میرا اور الله کا تعلق بڑا پرانا ہے-

    پہلے میں اسے مولوی کی آنکھ سے دیکھتا تھا، لہٰذا اس سے ڈرتا تھا ، مجھے لگتا تھا الله ایک بھٹیارن ہے جس نے دوزخ کے نام پر بہت بڑی بھٹی جلا رکھی ہے، بھٹی پر دانے بھن رہے ہیں-

    لوگ بھٹی کے قریب آتے ہیں اور الله انھیں پکڑ پکڑ کر بھٹی میں جھونک دیتا ہے-

    پھر میں نے الله کو شہاب کی آنکھ سے دیکھا تو وہ فورا صوفے پر میرے قریب آ کے بیٹھ گیا، اب تک بیٹھا ہے-

    میں روز اس سے باتیں کرتا ہوں، وہ مجھے جواب دیتا ہے-

    ہم گھنٹوں گپیں لگاتے ہیں-

    جوک شیر کرتے ہیں-

    ہنستے ہنساتے ہیں-

    میں تھک جاتا ہوں تو اٹھ کر سونے چلا جاتا ہوں، لیکن الله اسی طرح صوفے پر بیٹھا رہتا ہے-

    الله میرے ساتھ اس حد تک رہا ہے کہ میں اب اس سے تنگ آگیا ہوں، رج گیا ہوں-

    میں نے بھٹیارن الله اور دوست الله دونوں کو بڑے قریب سے دیکھا لیکن مجھے سمجھ دونوں کی نہیں آئی-

    اس کے غصے اور اس کی رحمت کی کوئی وجہ نہیں ہوتی-

    معمولی معمولی سی بات پر شاتم کو قتل کر دے تو جنتی، دانشور گستاخی کو اختلاف رائے سمجھ کر فراخ دلی کا مظاہرہ کرے تو وہ بھی جنتی-

    لو یہ کیا بات ہوئی، پوچھوں گا میں اس سے-

    وہ بہت عجیب ہے-

    بلکل عورت کی طرح ، میں جب اسے نہیں مانتا تھا تو سارا سارا دن اس کے خلاف تقریریں کرتا تھا- لوگوں کو اس کے خلاف اکساتا تھا-

    وہ مجھ پر بڑا مہربان تھا-

    سارا سارا دن میرے پیچھے پھرتا رہتا تھا-

    مجھے اپنی اداؤں سے لبھاتا ، اپنے حسن ، خوبصورتی اور اخلاق سے قائل کرنے کی کوشش کرتا تھا-

    لیکن جب میں نے اسے مان لیا، میں اس کا پبلک ریلیشن آفیسر بن گیا- پبلسٹی منیجر بن گیا تو وہ آگے آگے چل پڑا-اب وہ میری طرف دیکھتا تک نہیں-

    میں نے کئی مرتبہ اس کا پلو پکڑ کر جھٹکا اس کو متوجہ کرنے کی کوشش کی لیکن اس نے مجھ پر ایک ترچھی نظر تک نہ ڈالی-

    کبھی ملاقات ہوئی تو اس سے ضرور کہوں گا -

    " جناب الله صاحب الله اس قسم کے نہیں ہواکرتے ،آپ فورا اپنی پالیسی بدلیں-"
    لوگوں میں آپ کی ریپوٹیشن متاثر ہو رہی ہے "

    چلو تمہیں ایک اور کام کی بات بتاتا ہوں-

    کبھی زندگی میں زیادہ الله الله نہ کرنا اگر اس نے چھبا ڈال لیا تو پھر کہانی ختم ، دنیا رہنے کے قبل نہیں رہے گی-

    درمیانی درجے کی مسلمانی سے بڑھ کر دنیا میں کوئی خوش قسمتی نہیں ہوتی-
    2gvsho3 - از جاوید چودھری ،کتاب: گئے دنوں کے سورج ، سے اقتباس

  2. #2
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    25,270
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5876
    Rep Power
    214780

    Default Re: از جاوید چودھری ،کتاب: گئے دنوں کے سورج ، سے اقتباس

    2gvsho3 - از جاوید چودھری ،کتاب: گئے دنوں کے سورج ، سے اقتباس

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •