Results 1 to 2 of 2

Thread: جرمِ انکار کی سزا ہی دے

  1. #1
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    25,270
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5876
    Rep Power
    214780

    New5555 جرمِ انکار کی سزا ہی دے


    جرمِ انکار کی سزا ہی دے
    میرے حق میں بھی کچھ سنا ہی دے
    شوق میں ہم نہیں زیادہ طلب
    جر ترا نازِ کم نگاہی دے
    تو نے تاروں سے شب کی مانگ بھری
    مجھ کو اک اشکِ صبح گاہی دے
    تو نے بنجر زمیں کو پھول دیے
    مجھ کو اک زخمِ دل کشا ہی دے
    بستیوں کو دیے ہیں تو نے چراغ
    دشتِ دل کو بھی کوئی راہی دے
    عمر بھر کی نواگری کا صلہ
    اے خدا کوئی ہم نوا ہی دے
    زرد رو ہیں ورق خیالوں کے
    اے شبِ ہجر کچھ سیاہی دے
    گر مجالِ سخن نہیں+ ناصر
    لبِ خاموش سے گواہی دے


    2gvsho3 - جرمِ انکار کی سزا ہی دے

  2. #2
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    25,270
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5876
    Rep Power
    214780

    Default Re: جرمِ انکار کی سزا ہی دے

    2gvsho3 - جرمِ انکار کی سزا ہی دے

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •