Results 1 to 2 of 2

Thread: اداکار یوسف خان۔۔۔۔۔۔۔ عبدالحفیظ ظفر

  1. #1
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    21,778
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5865
    Rep Power
    214776

    glass اداکار یوسف خان۔۔۔۔۔۔۔ عبدالحفیظ ظفر

    اداکار یوسف خان۔۔۔۔۔۔۔ عبدالحفیظ ظفر

    yousaf khan.jpg
    ، انہوں نے سینکڑوں فلموں میں کام کیا،پنجابی فلموں سے شہرت ملی

    پاکستانی فلمی صنعت کی پہلی فلم '' تیری یاد‘‘ تھی۔جس میں آشا پوسلے اور ناصر خان نے مرکزی کردار ادا کیے تھے۔ناصر خان دلیپ کمار کے بھائی تھے اور انہیں یہ اعزاز حاصل ہے کہ انہوں نے پہلی پاکستانی فلم میں کام کیا۔یہ فلم باکس آفس پر اتنی کامیاب نہیں ہوئی۔شروع میں پاکستانی فلمی صنعت کو اصل کامیابی پنجابی فلموں سے ملی ۔فلمسٹار و اداکار نذیر نے ''پھیرے‘‘اور ''لارے‘‘ جیسی فلمیں بنائیں جن سے اس فلمی صنعت کو استحکام ملا۔اس کے بعد پھر اردو فلمیں بھی کامیابی سے ہمکنار ہونے لگیں۔اس دور میں عنایت حسین بھٹی ،سنتوش کمار اور سدھیر اردو اور پنجابی فلموں میں چھائے ہوئے تھے۔ان کے ساتھ جو اداکار ائیں اپنے فن کے جوہر دکھا رہی تھیں ان میں صبیحہ خانم ،نیر سلطانہ،نگہت سلطانہ اور شمی نے بہت اچھا کام کیا۔اس کے بعد نیلو اور مسرت نذیر بھی فلمی صنعت میں اپنے فن کے موتی بکھیرنے آگئیں۔ان کے ساتھ ساتھ میڈم نور جہاں بھی اداکاری اور گلو کاری کر رہی تھیں۔پاکستان آنے سے پہلے بھارت میں ان کے نام کا طوطی بولتا تھا۔
    اردو فلموں میں کچھ اداکار اور آئے جن میں درپن اور اسلم پرویز کا نام اہم ہے ۔ایک اور حسین و جمیل نوجوان یوسف خان بھی فلموں میں قسمت آزمائی کیلئے آئے۔یوسف خان نے پہلے اردو فلموں میں کام کیا ۔ان کی پہلی فلم ''پرواز‘‘تھی۔یکم اگست 1931کو فیروز پور (بھارت)میں پیدا ہونے والے یوسف خان کا اصل نام خان محمد تھا۔انہوں نے فلموں میں پہلے معاون اداکار کے طور پر کام کیا لیکن بعد میں انہوں نے مرکزی کردار ادا کرنا شروع کر دیئے۔وہ 46سال تک پاکستانی فلمی صنعت سے وابستہ رہے۔ پھروہ 70اور 80کی دہائی میں پنجابی فلموں میں ایکشن ہیرو کے طور پر اپنے فن کے جلوے دکھا تے نظر آئے۔انہوں نے کچھ پشتو فلموں میں بھی کام کیا۔ان کی اردو فلموں میں پرواز،حسرت ،لگن ،دوراستے ،سسرال اور خاموش رہو خاص طور پر قابل ذکر ہیں۔
    مذکورہ بالا فلموں میں ان کی اہم ترین فلمیں ''سسرال اور خاموش رہو‘‘تھیں جن میں انہوں نے اچھا کام کیا۔دونوں سپرہیٹ فلمیں تھیں۔لیکن ہوا یوں کہ ''سسرال‘‘میں علائوالدین کی لافانی اداکاری نے سب کو پیچھے چھوڑ دیااور ''خاموش رہو‘‘میں محمد علی سب پر بازی لے گئے۔اگرچہ ان دونوں اردو فلموں میں یوسف خان ہیرو تھے لیکن دوسرے اداکاروں کے فن کے جادو نے سب کو مسحور کر دیا ۔اس کے بعد بھی یوسف خان نے ''ماں باپ،تاج محل ،دل بے تاب اور غرناطہ ‘‘جیسی فلموں میں کام کیا۔لیکن ان کی اتنی پذیرائی نہیں ہوئی۔ان کے بارے میں فلمسازوں اور ہدایتکاروں کی یہ رائے تھی کہ وہ اردو فلموں کیلئے موزوں نہیں،کیونکہ ان کا لہجہ اردو فلموں والا نہیں تھا۔انہوں نے 1965ء میں ''ملنگی‘‘جیسی شہرہ آفاق پنجابی فلم میں کام کیا۔یہ فلم چودھری محمد اسلم المعروف اچھا شوکر والا کی تھی۔یہ فلم اتنی کامیاب ہوئی کہ جب بھی نمائش پذیر ہوتی تھی،سلور جوبلی ضرور کرتی تھی۔اس فلم میں یوسف خان نے فردوس کے ساتھ ہیرو کے طور پر کام کیا تھا اور ان کی اداکاری کو سراہا گیا۔لیکن ہوا یوں کہ اکمل اور مظہرشاہ کی موجودگی میں ان کا کردار دب سا گیا،اکمل نے مرکزی کردار ادا کیا تھا اور مظہر شاہ ان کے سکھ دوست کے کردار میں جلوہ گر ہوئے تھے۔''ملنگی‘‘کی بے مثال کامیابی سے بہرحال یہ بات طے ہوگئی کہ یوسف خان پنجابی فلموں میں بہت اچھا کام کرسکتے ہیں۔وہ زمانہ سدھیر کا تھا جس کے بعد اکمل آگئے اور انہوں نے سب کو پیچھے چھوڑ دیا۔انہیں پنجابی فلموں کا دلیپ کمار کہا جانے لگا۔حبیب اور اعجازبھی پنجابی اور اردو فلموں میں اداکاری کر رہے تھے ۔اکمل اور مظہر شاہ کی جوڑی بڑی ہٹ تھی۔یوسف خان کو ابھی اپنی منزل کی تلاش تھی۔1967ء میں اکمل کی نا گہانی وفات کے بعد یوسف خان ،حبیب اور اعجاز کا پنجابی فلموں میں عروج شروع ہوا۔یوسف خان کو دھڑا دھڑ پنجابی فلموں میں کاسٹ کیا جانے لگا۔حبیب اور اعجاز بھی ان کے پیچھے تھے۔
    ۔1970ء کی دہائی یوسف خان کے لیے بڑی مبارک ثابت ہوئی۔انہیں مرکزی کردار ملنے لگے اور ان کی فلمیں سپر ہٹ ہونا شروع ہو گئیں۔
    ۔1970ء میں اقبال کاشمیری نے انہیں اپنی سپر ہٹ پنجابی فلم''ٹیکسی ڈرائیور‘‘میں مرکزی کردار دیا جو انہوں نے بڑے شاندار طریقے سے نبھایا۔اس کے بعد ان کی مانگ میں زبردست اضافہ ہوگیا۔ہدایت کار اقبال کاشمیری نے انہیں ''ضدی‘‘میں کاسٹ کیا۔یہ فلم بھی سپرہٹ ثابت ہوئی۔اس میں ان کے ساتھ فردوس ،اعجاز،نبیلہ اور الیاس کاشمیری نے اہم کردار ادا کیے۔اس فلم کے نغمات بھی بہت پسند کیے گئے۔حزیں قادری کے لکھے ہوئے نغمات کو ماسٹر عبداﷲنے اپنے دلکش سنگیت کا لباس پہنایا۔اس فلم میں یوسف خان فن کی بلندیوں پر دکھائی دیتے ہیں ان کے ساتھ نبیلہ کی اداکاری کو بھی بہت سراہا گیا۔دراصل یہ فلم بھارت کی مشہور فلم''مدر انڈیا‘‘سے متاثر ہوکر بنائی تھی۔''ضدی‘‘اداکارہ ممتاز کی پہلی فلم تھی جس میں ان پر عکس بند کیا گیا ایک گیت بڑا مشہور ہوا تھا جس کے بول تھے''وے چھڈ میری وینی نہ مروڑ‘‘۔
    یوسف خان نے سلطان راہی کی طرح بہت زیادہ فلموں میں کام نہیں کیا ۔وہ بہرحال سلطان راہی کی نسبت کم کام کرتے تھے۔ان کی اداکاری کی سب سے بڑی خوبی یہ تھی کہ وہ اوور ایکٹنگ نہیں کرتے تھے۔وہ دھیمے لہجے میں بولتے تھے لیکن جب ضرورت پڑتی تھی تو اپنی گرجدار آواز سے بھی فلمی شائقین کو متاثر کرتے تھے۔ وہ بڑی دلکش شخصیت کے مالک تھے۔انہوں نے صبیحہ خانم،نیلو،آسیہ،انجمن،فردوس اور نغمہ کے ساتھ خاصاکام کیا۔وہ مزاحیہ اداکاری بھی کرسکتے تھے۔جس کی سب سے بڑی مثال ان کی فلم ''اتھرا‘‘ہے جو 1975 میں ریلیز ہوئی۔
    انہوں نے سلطان راہی اور مصطفیٰ قریشی کے ساتھ کئی فلموں میں کام کیا۔ ایک زمانے میں مصطفیٰ قریشی کے ساتھ ان کی بہت فلمیں ریلیز ہوئیں۔ جن میں وارنٹ، حشر نشر، چالان، چور سپاہی، غلامی، رستم تے خان اورسوہنی مہیوال بڑی کامیاب ثابت ہوئیں۔ ''جبرو اور نظام ڈاکو نے بھی بہت بزنس کیا۔ ''سوہنی مہیوال‘‘میں اداکاری کر کے انہوں نے ثابت کر دیا کہ اب بھی وہ رومانوی کردار ادا کر سکتے ہیں۔ نغمہ کے ساتھ ان کی فلم ''سدھا رستہ‘‘بہت ہٹ ہوئی۔ ان کی پنجابی فلمیں ''چن پتر‘‘ بائوجی اور جاپانی گڈی‘‘ بھی بہت کامیاب رہیں۔ وہ بڑی ٹھیٹھ پنجابی بولتے تھے ،وہ پنجابی جسے ماجھے کی بولی کہتے ہیں۔ ان سے پہلے اکمل اور مظہر شاہ بڑی مہارت سے ماجھے کی بولی بولتے تھے۔
    یوسف خان کی یادگار پنجابی فلموں میں ''ٹیکسی ڈرائیور‘‘ضدی رستم تے خان، غلامی، دھی رانی اور بڈھا گجر‘‘ شامل ہیں۔ وہ ماپ کے چیئرمین بھی رہے۔ ان کے کئی اداکاروں کے ساتھ جھگڑے بھی مشہور ہوئے اور انہیں فلمی صنعت کا دادا بھی کہا جانے لگا۔ مصطفیٰ قریشی سے ان کی سیاسی مخالفت تھی۔ سلطان راہی کی موت کے بعد دونوں کی صلح ہو گئی۔
    اسی طرح شجاعت ہاشمی نے جب بھارت جا کر سعادت حسن منٹو کے افسانے'' ٹوبہ ٹیک سنگھ‘‘ پر بننے والی ٹیلی فلم میں کام کیا تو یوسف خان نے اس کا بھی برا مانا۔ وہ بھارت اور بھارتی فلموں سے نفرت کرتے تھے۔ ان کا کہنا تھا کہ انہوں نے اپنی آنکھوں سے 1947 میں مسلمانوں کی کٹی پھٹی نعشیں دیکھی ہیں اور وہ یہ دلخراش مناظر کبھی فراموش نہیں کر سکتے۔ اس طرح وہ بھارتی اداکاروں کے پاکستان آنے کے بھی بڑے مخالف تھے۔ ان سے لاکھ اختلاف کیا جاسکتاہے لیکن اس بات کو جھٹلایا نہیں جا سکتا کہ وہ ایک سچے قوم پرست تھے۔
    ایک بار راقم کی ان سے تفصیلی ملاقات ہوئی تو انہوں نے افسوس بھرے لہجے میں کہا کہ وہ اردو فلموں کے اداکار بننا چاہتے تھے اور ان کی خواہش تھی کہ وہ بھی کالج کے طالب علم کی طرح کاپی پنسل ہاتھ میں لیئے سکرین پر نمودار ہوں لیکن فلمی صنعت کے ناخدائوں نے انہیں پنجابی فلموں کیلئے موزوں قرار دیا۔ مجھ پر الزام عائد کیا گیا کہ میرے اردو بولنے کا لہجہ درست نہیں۔ پھر انہوں نے ہنستے ہوئے کہا کہ اب فلمساز اور ہدایتکار مجھے گھوڑے پر بیٹھنے کیلئے کہتے ہیں۔ بندہ ان سے پوچھے کہ اگر میں اس عمر میں گھوڑے سے گر جائوں اور اپنی ہڈی پسلی تڑوا بیٹھوں تو اس کا ذمہ دار کون ہوگا‘‘۔
    یوسف خان ذاتی زندگی میں بڑے بذلہ سنج اور مرنجا مرنج تھے۔ اس میں کوئی شک نہیں کہ وہ بڑے بے باک تھے۔ ہدایت کار الطاف حسین نے جب انہیں ''دھی رانی‘‘ میں کاسٹ کیا اور کہا گیاکہ اداکارہ ممتاز اس فلم میں ان کی بہن کا کردار ادا کریں گی تووہ ایک لمحے کیلئے سٹپٹا گئے۔ انہوں نے شرط عائد کی کہ ممتاز کے ساتھ ان کا کوئی مکالمہ نہیں ہوگا اور پھر یہی ہوا۔ ''دھی رانی‘‘ میں ان کا یہ مکالمہ ''اوئے ابا تیریاں کالیاں نے ماریا‘‘ بہت مشہور ہوا۔
    یوسف خان کی دیگر فلموں میں ''بابل، جواب دو، چتراتے شیرا، پھول اور شعلے، یارانہ، وڈاخان، اللہ رکھا اور'' قصہ خوانی‘‘ شامل ہیں۔ ان کی خوش بختی تھی کہ انہیں شروع میں ہی ریاض شاہد جیسا نابغہ روزگار مل گیا۔ جنہوں نے یوسف خان کی صلاحیتوں کو نکھارا۔20ستمبر2009 کو یوسف خان کا 78 برس عمرمیں لاہور میں انتقال ہو گیا۔




    2gvsho3 - اداکار یوسف خان۔۔۔۔۔۔۔ عبدالحفیظ ظفر

  2. #2
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    21,778
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5865
    Rep Power
    214776

    Default Re: اداکار یوسف خان۔۔۔۔۔۔۔ عبدالحفیظ ظفر

    2gvsho3 - اداکار یوسف خان۔۔۔۔۔۔۔ عبدالحفیظ ظفر

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •