Results 1 to 2 of 2

Thread: میرے پیکر میں تیری ذات کی تنصیب لازم ہے

  1. #1
    Join Date
    Aug 2021
    Location
    Lahore
    Posts
    8
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)
    Thanked
    1
    Rep Power
    0

    candel میرے پیکر میں تیری ذات کی تنصیب لازم ہے

    میرے پیکر میں تیری ذات کی تنصیب لازم ہے
    بہت بکھرا ہُوا ہوں میں، اور اب ترتیب لازم ہے
    ****
    عجب وادی ہے وحشت کی، اَٹی ہے دُھول نفرت کی
    گھر کو گھر بنانے کو، نئی ترکیب لازم ہے
    ****
    مدھر سے راگنی گائیں، چلو کہ جام چھلکائیں
    میرے گھر میں ہو آئے تم، کوئی تقریب لازم ہے
    ****
    جہاں پر چار ذہنوں میں، بھرا شر ہو، کدورت ہو
    تو ہو لاحق قبیلے کو، کوئی تخریب لازم ہے
    ****
    میری برہم مزاجی کا، نہیں مطلب میں ایسا ہوں
    وہاں میں جُھک کے مِلتا ہوں، جہاں تہذیب لازم ہے
    ****
    کرو تقسیم تم حاوی، سدا خیر و محبت ہی
    کہ اب اِس دَورِ نفرت میں، یہی ترغیب لازم ہے
    ****
    (طارق اقبال حاوی)

  2. #2
    Join Date
    Aug 2012
    Location
    Baazeecha E Atfaal
    Posts
    14,528
    Mentioned
    1112 Post(s)
    Tagged
    210 Thread(s)
    Thanked
    324
    Rep Power
    24

    Default Re: میرے پیکر میں تیری ذات کی تنصیب لازم ہے

    Bohat Khoob Janaab :-)
    (-: Bol Kay Lab Aazaad Hai'n Teray :-)


Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •